The news is by your side.

نوشکی میں بنیادی توانائی کا بحران

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

- Advertisement -

نوشکی میں بنیادی توانائی کا بحران
ضلع اس وقت شدید بنیادی توانائی کے بحران کی زد میں ہے بنیادی توانائی سے مراد گیس بجلی اور ایندھن کے تمام تر سہولیات کا فقدان پیدا ھوا ہے سب سے پہلے میں زکر کرنا چاہوں گا رخشان ڈویژن کے سب سے بڑے شہر نوشکی میں بجلی کی سپلائی کا جہاں صرف 12 گھنٹے شہر اور مضافات میں فیڈر وائز 6 اور 8 گھنٹے بجلی دی جا رہی ہے اور یہ گزشتہ طویل عرصے سے جا ری ہے دوسری جانب نوشکی میں گیس کی بحران نے موجودہ حکومت میں اسقدر سر اٹھا لیا ہے کہ ایل پی۔جی۔پلانٹ نوشکی سے مخصوص علاقوں کو بمشکل 6 گھنٹے گیس دی جا رہی تھی اب صورت حال یہ ہے کہ گزشتہ 20 دنوں سے زائد کا عرصہ گزرا ہے کہ ایل۔پی جی پلانٹ میں گیس ہی نہیں ہے ایس ایس جی سی نے ضلع نوشکی کے پلانٹ کو گیس بوزرز کی سپلائی بند کر رکھی ہے جس سے عوام کافی پریشان ہے نوشکی میں شہری ایریا میں گیس کی لائنیں موجود ہیں جبکہ شہر کے گرد ونواح میں مضافاتی آبادی میں گھریلو استعمال کے لئے مقامی لکڑی (تاگز) جو افغانستان سے آتی رہی اب سرحد پر باڑ لگانے اور پاک آرمی کی آمد سے لکڑی لانے کا سلسلہ بھی محدود ھو چکا ہے اور اسی مقامی لکڑی کو ضلع خاران سے بھی لوگ برائے سوختنی مقاصد کے لئے بھی لاتے رہے ضلع خاران کی انتظامیہ کی جانب سے ضلع لکڑی پر بندی کی گئی ہے اب ضلع نوشکی اسوقت ایندھن برائے ضروریات زندگی کے شدید بحران کی۔زد میں ہے کم مقدار میں لکڑی آنے کی وجہ سے لکڑی۔کی۔قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہے بجلی گیس لکڑی نے غریب نادار طبقہ کی زندگی مفلوج کر رکھی ہے ضلع میں اس بحران کی جانب ضلعی انتظامیہ سمت عوامی نمائیدگان نہ تو توجہ دے رہے ہیں نہ ہی سخت اسٹینڈ لے رہی ہیں میرے نزدیک یہ وفاقی حکومت کے سبجیکٹس ہیں اور رخشان ڈویژن اس وقت وفاقی حکومت میں کافی مضبوط پوزیشن میں ہے سب سے پہلے سینٹ کا چیرمین اور دو ارکان کا تعلق رخشان ڈویژن سے ہے اور دونوں ارکان سینٹ کا تعلق بھی نوشکی سے ہے دو ایم این ایز کا تعلق بھی رخشان ڈویژن کا تعلق بنیادی طور پر چاغی ضلع سے ہیں لیکن توانائی کے بحران کو اب تک۔ختم۔نہیں کیا جا سکا ہے شہری ایریا میں بجلی کی فراہمی اور نوشکی گیس پلانٹ میں گیس کی کمی کو دور کرنے کے ساتھ دالبندین اور خاران شہر میں گیس کی۔فراہمی کو جلد از جلد مکمل ھونا چاہیئے تھا شنید میں آیا ہے کہ دالبندین میں جلد ایل۔پی جی پلانٹ کی تنصیب کا کام شروع کر دیا گیا ہے اسی طرح خاران اور واشک کے عوام کو بھی یہ حق دینا چاہیئے البتہ ضلع نوشکی جیسے اہم شہر کو اسطرح بنیادی سہولتوں سے یکسر محروم رکھنا یہاں کے عوام کے ساتھ ناانصافی اور عوام کے نمائیندوں کی نااہلی سے تعبیر کی جارہی ہے آواز فورم وفاقی حکومت صوبائی حکومت بلخصوص سینٹ کے چیرمین محمد صادق سنجرانی ارکان سینٹ میر یوسف بادینی ڈاکٹر جہانزیب جمالدینی میر ہاشم نوتیزئی اور آغا حسن بلوچ سے اپیل کرتی ہے کہ نوشکی کو توانائی کے اس شدید بحران سے فوری نکالا جائے اور رخشان ڈویژن کے تمام شہروں کو بجلی کی فراہمی کو زیادہ سے زیادہ بنانے کو یقینی بنایا جائے اور ضلع خاران واشک چاغی کے لئے گیس لائن یا ایل پی جی پلانٹ کی نصب کر کے عوام۔کو سہولت فراہم جائے اس سے مقامی سطع پر بچی ھوئی جنگلات کا تحفظ بھی ھو گا اور ڈویژن میں خوشحالی اور ترقی ممکن ھو گی آپ سب یعنی 5 وفاقی ارکان کی موجودگی میں اگر رخشان ڈویژن ترقی نہ کر سکا تو پھر کبھی نہیں کر سکے گی
نوشکی تحریر شاہ نزر بادینی

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

You might also like