CTSP ٹیسٹ اور اسکے نتاہج سے متعلق ثناء بلوچ کا بلوچستان میڈیا کیساتھ خصوصی بات چیت

|CTSP||Balochistan|


بی این پی کے رہنما ایم پی اے واجہ ثناءالللہ بلوچ کا CTSP ٹیسٹ اور اسکے نتاہج سے متعلق حکومت کو اھم مشورہ- 3000 بند اسکولوں کو پیش نظر رکھ کر جلد از جلد۔ اساتذہ کی تعیناتی عمل میں لائی جاہے- ثناء بلوچ کا بلوچستان میڈیا کیساتھ خصوصی بات چیت
CTSPکا طریقہ کاردرس نہیں امیدواروں میں بے چینی پائی جارہی ہے ، ثناءبلوچ
بلوچستان نیشنل پارٹی کے صوبائی اسمبلی میں اپوزیشن رنماءثناءبلوچ نے کہا ہے کہ بلوچستان میں تقریباً 2700کے قریب سکول بند پڑے ہیں جبکہ جن سکولوں میں درس و تدریس کا سلسلہ جارہی ہے وہاں پر شدید اساتذہ کی کمی پائی جاتی ہے جس کی وجہ سے بلوچستان میں تعلیمی میعار کم ہوگیا ہے ہماری تعلیمی شرح میں اضافہ ہونے کی بجائے 4فیصد کمی ہوگئی ہے اس صورتحال کو دیکھ صوبائی حکومت نے اساتذہ کی بھرتیوں کا اعلان کیا CTSPمیںجو اساتذہ بننے والے ہےں ان سے ایسے سوالات پوچھے جائیں جو تعلیم سے متعلق ہو ، درس و تدریس سے متعلق ہو ، بلوچستان کے جو سماجی معاشی کچھ ایسے سوالات ہو لیکن CTSPان ہمارے مستقبل کے اساتذہ سے ایسے سوالات پوچھ رہے ہیں جس سے ٹیسٹ سے کوئی تعلق ہی نہیں ہے ان خیالات کا اظہار انہوںنے گزشتہ روز بلوچستان میڈیا اکیدمی سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوںنے کہا کہ مستقبل کے اساتذہ سے کوئی کھیل کے سوالات کسی سے بڑے کھلاڑی کے بھارے میں کسی دوسرے معاملات کے بارے میں سوالات پوچھے جارہے ہیں میرا کہنا ہے کہ ان کو کھلاڑی نہیں بنبا ہے ان کو مستقبل کے اساتذہ بننا ہے ان سے تعلیم سے متعلق سوالات کیے جائے انہوںنے کہا کہ اساتذہ کے جو ٹیسٹ ہوتے ہیں ان سے تعلیم کے حوالے سے سوالات پوچھے جاتے ہیں CTSPمیں بہت سے ٹیکنیکل خرابی ہے حکومت بلوچستان سے مطالبہ ہے کہ یہ لوگ بہت محنت کے بعد اس مقام پر پہنچ گئے ہیں ان کے ساتھ ناانصافی نہیںہونی چاہئے ان میں سے بہت سے امیدواروں نے بہت کم نمبر لیئے ہیں CTSP کے پاسنگ مارکس 50فیصد ہے اگر کسی نے 25,30تک نمبر لیا ہے ان کو پاس کیا جائے جن جن علاقوں میں نوجوان میرٹ پر آئینگے ان کو بھرتی کیا جائے کیونکہ ان کی جو تربیت ہے بھرتی کے بعد حکومت ان کو ٹرینگ دینگے ان کی بہت بہتر طریقے سے رہنمائی کی جاتی ہے وہ بہت ضروری ہوتا ہے بسبت CTSPکے انہوںنے کہا کہ CTSPمیں امیدواروں کے تعلیمی اسناد ان کی عمر وغیرہ چیک کیا جائے اساتذہ بننے میں ایک وقت لگتا ہے اس میں حکومت ان امیداروں کی رہنمائی کریں ناکہ ان کو مایوسی کا سامنا کرنا پڑے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close