احمد نواز بلوچ کا ڈی ایچ او کوئٹہ کے ہمراہ سریاب میں غیر فعال بی ایچ یوز کو فعال کرنے کے سلسلے میں دورہ

0

یاب پی بی 30کوئٹہVII

صحتی مراکز غیر فعال ہونیکے سبب جہلم کاریز اور کلی نیک محمد لہڑی کے رہائشی بنیادی سہولیات سے محروم تھے.ایم پی اے احمد نواز بلوچ

ایم سی ایچ نیک محمد لہڑی شفیع کالونی اور بی ایچ یو جہلم کاریز جیو کو مرمت اور آرائش کرنے کے بعد جلد فعال کرکے عوام کیلئے صحتی سہولیات کا آغاز کیا جائے گا. ڈی ایچ او کوئٹہ

کوئٹہ(سریاب نیوز) بلوچستان نیشنل پارٹی کے متحرک رہنماء ضلعی صدر کوئٹہ رکن صوبائی اسمبلی ایم پی اے احمد نواز بلوچ نے عرصہ دراز سے غیر فعال بی ایچ یو جہلم کاریز اور ایم سی ایچ کلی نیک محمد لہڑی شفیع کالونی سریاب کا دورہ ڈی ایچ او کوئٹہ کے ہمراہ کیا.اس موقع پر بی این پی کے وارڈ 56 کے سابقہ کونسلر مجیب الرحمن لہڑی ، حاجی وحید لہڑی ، نذیر احمد اور سینئر ساتھیوں سمیت حلقے کے عوام کی بڑی تعداد موجود تھی. انہوں نے احمد نواز بلوچ کے اس اہم اقدام کی بھرپور طریقے سے حوصلہ افزائی کی کہ انہوں نے اہم بنیادی صحتی بیس سال سے غیر فعال مراکز کو فعال کروانے کے سلسلے میں توجہ دی. جس سے ہمارے علاقوں میں ابتدائی طبی امداد کے علاوہ دیگر امراض کا علاج ممکن ہو سکے گا.جس کیلئے ہم انکے ممنون و مشکور ہیں. اس موقع پر ایم پی اے احمد نواز بلوچ نے کہا سریاب میں صحتی سہولیات نہ ہونیکے برابر ہیں. اس وجہ سے یہاں کے لوگوں کو بیشتر چھوٹی موٹی بیماریوں کے سلسلے میں بھی سیول ہسپتال, بی ایم سی جانا پڑتا ہے.جبکہ یہاں ایمرجنسی کی سہولیات بھی نہیں تھیں.جس سے اکثر مریض کی حالت غیر ہو جاتی تھی. ہم نے اس سلسلے میں اپنی کوششیں جاری رکھی کہ کیسے عوام کو انکی دہلیز پر صحت کی سہولیات حاصل ہو. اس سلسلے میں ایم سی ایچ کلی نیک محمد لہڑی شفیع کالونی اور جہلم کاریز جیو میں بی ایچ یو میں غیر متعلقہ لوگ رہائش پزیر تھے.جنہیں محکمہ صحت کے عملے سے واگزار کرکے بحال کروا دیا گیا. انشاءاللہ ان دونوں مراکز میں جلد ہی صحتی سرگرمیوں کا آغاز ہوگا. جس سے علاقے کے لوگ مستفید ہوسکیں گے. اس موقع پر ڈی ایچ او کوئٹہ نے کہا کہ عرصہ دراز سے یہ دونوں مراکز پوشیدہ تھے. جنہیں احمد نواز بلوچ کی مسلسل کوششوں سے بحالی کیجانب گامزن کیا جا رہا ہے. انکا کہنا تھا دونوں عمارتیں مرمت طلب ہیں. انکو آرائش اور مرمت کرنے کے بعد عوام کیلئے جلد بحال کر دیا جائے گا. جس میں ادویات اور اسٹاف کی فراہمی ترجیحی بنیادوں پر یقینی بنایا جائے گا.

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.