اجلاس میں ایرانی تیل کی غیرقانونی طور پر بلوچستان میں آناچیف سیکرٹری بلوچستان

0

کوئٹہ02جنوری :۔پاک ایران جوانٹ بارڈر کمیشن کا 23ویں اجلاس کوئٹہ کے ایک مقامی ہو ٹل میں دوسرے روزبھی جاری رہا پاکستان وفد کی قیادت

 

چیف سیکرٹری بلوچستان کیپٹن (ر) فضیل اصغر جبکہ ایرانی وفد کی قیادت ڈپٹی گورنر سیستا ن بلوچستان محمد حا دی مرعشی نے کی اجلاس میں دونوں طرف سے سول وعسکری حکام نے بھی شرکت کی ۔اجلاس میں ایرانی تیل کی غیرقانونی طور پر بلوچستان میں آنا،زائرین کو سہولیات کی فراہمی سرحد وں پر دراندازی و خلاف ورزی سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیاگیا ۔چیف سیکرٹری بلوچستان نے کہاکہ گزشتہ سال قانون نافذ کرنے والے اداروں نے 348ملین اسمگل شدہ ایرانی تیل قبضے میں لیا ہیں اس کے علاوہ جو غیر قانون طریقوں سے تیل ملک کے مختلف حصوں میں جاتا ہے وہ الگ سے ہے جس سے معیشت کی روانی متاثر ہوتی ہے اور قیمتی انسانی جانوں کا ضیاع بھی ہوتا ہے اورحال ہی میں کمشنر مکران ڈویژن ایک حادثے میںشہید ہوگئے اس کے علاوہ سینکڑوں کی تعداد میں لوگ اپنی جان گنو اچکے ہیں کیونکہ یہ چلتا پھرتا بم ہے جوکسی بھی وقت کسی بڑے حا دثے کا سبب بن سکتا ہے ۔صوبائی حکومت نے اس غیر قانونی کاروبار کی روک تھام کیلئے اقدامات اُٹھا ئے ہیں ۔اور ایران بھی اس معاملے کو سنجیدہ لیں انہوں نے کہاکہ وفاقی اور صوبائی حکومت نے زائرین کو بہترین سہولیات کی فراہمی کیلئے بھی اقدامات کیئے ہیں جس میں فول پروف سیکیورٹی کی فراہمی شامل ہے جبکہ زائرین کی سہولیات کیلئے ریلوے لائن کا منصوبہ بھی زیر غور ہے ۔چیف سیکرٹری نے کہاکہ بارڈر پر اسمگلنگ اور دہشت گردی کے واقعات سے نمٹنے کیلئے سرحدوں پر فینسنگ بہت ضروری ہے جو دونوں ملک کے مفاد میں ہوگا ڈپٹی گورنرسیستا ن بلوچستان محمد حا دی مرعشی نے بلوچستان کی جانب سے اُٹھا ئے گئے اقدامات کر سر اہتے ہوئے کہا کہ ایران ہرطرح سے پاکستان اور بلوچستان کے ساتھ تعاون کریں گا انہوں نے کہا کہ دنوں ملک کے مسائل یکساں ہیںجس پر قابوپانے کیلئے اقدامات کریںگے ۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.